کورونا وباء سے بچنے کے لیے بچوں کی ٹیکہ اندازی لازمی ، آپ کو کرنا ہوگا یہ کام کریں

Reading Time: 3 minutes

بڑوں کے بعد اب بچوں کو کووڈ ویاکسین کی ٹیکہ کاری کیلئے حکومت کی جانب سے تیاریاں کی جارہی ہیں۔ اس وقت بچوں کیلئے چارکووڈ ویاکسین دستیاب ہیں۔ ٹیکہ کاری معاملے میں حکومت سب سے پہلے کینسر، نیورولوجیکل جیسی بیماریوں سے دوچار بچوں کو ترجیح دینا چاہتی ہے، کیونکہ کووڈ وبا سے ایسے بچوں کو زیادہ خطرہ لاحق ہے۔

۔ بھارت بائیوٹ کی Covaxin

دو سے اٹھارہ سال کے درمیان کے بچوں میں کوویاکسین کا ٹیکہ لگانے کی سفارش کی گئی ہے تاہم، اس ویاکسین پر ڈرگس کنٹرولر جنرل آف انڈیا ( DGCI ) کی جانب سے ایمرجنسی صورتحال میں استعمال کیلئے منظوری باقی ہے۔

۔ زائڈس کیاڈیلا کی ZyCoV-D ویاکسین

یہ ویاکسین بارہ سال سے زائد عمر کے بچوں کیلئے منظور کی گئی ہے۔ ڈرگس کنٹرولر جنرل آف انڈیا ( DGCI ) کی جانب سے ایمرجنسی صورتحال میں استعمال کیلئے منظور شدہ اس ویاکسین کی خصوصیت یہ ہیکہ اس ویاکسین کو دینے کیلئے انجیکشن کا استعمال نہیں کیا جاتا ہے۔ کووڈ وبا سے لڑنے کیلئے بنائی گئی یہ ویاکسین دنیا کی سب سے پہلی پلازمیڈ DNA ویاکسین ہے۔ یہ ویاکسین بچوں کیلئے موزوں ہے کیونکہ چھوٹے بچوں کو انجیکشن سے ڈر لگتا ہے۔

(علامتی تصویر: Pixabay)۔
(علامتی تصویر: Pixabay)۔

۔ بائیولوجیکل ای کی Corbevax

ڈرگس کنٹرولر جنرل آف انڈیا ( DGCI ) کی جانب سے 18-5 سال کے بچوں میں ٹرائلس کیلئے اس ویاکسین کو منظوری دی گئی ہے۔ اس ویاکسین کوپری کلینکل سے لیکر تیسرے مرحلے تک ڈپارٹمنٹ آف بائیو ٹکنالوجی اورBIRAC کے تعاون سے تیار کی گئی ہے۔

۔ سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کی Covovax

اعلیٰ سرکاری ادارے نے اس ویاکسین کو 18-2 سال کی عمر کے بچوں میں ٹرائیلس کیلئے منظوری دی گئی ہے۔ بچوں کو دی جانے والی یہ ویاکسین بیرون ممالک میں کے نام سے جانی جاتی ہے۔

کیسے دی جاتی ہے بچوں کو بغیرسوئی والی ویاکسین؟

بچوں میں بغیرسوئی والی ویاکسین کی تین خوراکیں دی جاتی ہیں۔ پہلی خوراک دئے جانے کے28 ویں روز دوسری خوراک دی جاتی ہے اور تیسری خوراک 56 ویں دن دی جاتی ہے۔

بچوں میں کووڈ ویاکسین دلانے سے قبل درجہ ذیل باتوں کا دھیان رکھیں :

۔ سب سے پہلے بچوں میں ٹیکہ کاری سے قبل، بچوں کے ڈاکٹر سے رابطہ کریں اور پتہ لگائیں کہ کہیں آپ کا بچہ کسی الرجی یا انفیکشن کا شکار تو نہیں ہے۔ اگر آپ کا بچہ دوائی لیتا ہے تو ٹیکہ کاری کے بارے میں ڈاکٹر سے مشورہ لیں۔

۔ بچوں کو ٹیکہ لینے سے قبل گھبرانے کی ضرورت نہیں اور نہ ہی وہ کوئی محنت مشقت کا کام کریں۔ یاد رکھیں کہ ٹیکہ لگانے سے کووڈ بیماری لاحق ہو ایسا نہیں ہے، اسلئے ٹیکہ کاری کو نظرانداز نہ کریں۔

۔ ٹیکہ کاری سے قبل، بچوں کو اچھی ڈائٹ کھلائیں۔ نہارپیٹ ٹیکہ نہ لگوائیں۔ ٹیکہ کاری سے پہلے تازہ پھل اور ترکاری کھائیں۔

۔ ٹیکہ لگوانے کے بعد گھبرائیں نہیں کیوں کہ انجیکشن کی جگہ ہلکا سا درد اور سوجن، بخار اور بدن درد جیسے سائیڈ ایفیکٹس عام بات ہے۔ اگرسائیڈ ایفیکٹس سنگین ہوں تو فوری ڈاکٹر سے رابطہ کریں۔

۔ ٹیکہ لینے کے بعد زیادہ سے زیادہ پانی پئیں، جنک فوڈ سے بچیں اور کھیل کود جیسے مشقت والے کام نہ کریں۔