Zika Virus:زیکا وائرس سے خود کو کیسے بچائیں؟

Reading Time: 2 minutes

زیکا وائرس کیا ہے؟

زیکا وائرس کی شناخت سب سے پہلے 1947میں یوگانڈا کے بندروں میں ہوئی تھی۔ اور، پھر 1952 میں یوگانڈااورتنزانیہ میں انسانی میں یہ وائرس پایا گیا۔ زیکا وائرس کی وبا پہلی بار 2007 میں مائیکرونیشیا کے یالپ جزیرے میں پھیلی اور پھر 2013 میں فرانیسیی پولنیشیا اور بحرالکاہل کے دیگر ممالک میں بڑے پیمانے پر زیکا کی وبا پھیلی تھی۔

زیکا وائرس کیسے پھیلتا ہے؟

زیکا وائرس عموما Aedes مچھروں سے پھیلتا ہے۔ جوعام طور پر گرم علاقوں میں پایا جاتا ہے۔ یہ وہی مچھر ہے جوچکون گنیا، ڈینگی اور زرد بخار کا بھی سبب بنتا ہے۔ متاثرہ حاملہ خاتون سے اسکے جنین میں بھی یہ وائرس داخل ہوسکتا ہے۔ جسمانی تعلقات سے بھی زیکا کا پھیلا ممکن ہے۔ اسی طرح،

۔(علامتی تصویرWHO)۔
۔(علامتی تصویرWHO)۔

مریض کو خون چڑھانے کے عمل کے دوران بھی زیکا وائرس کے پھیلنے کا خدشہ ہے تاہم، ابھی اسکی تصدیق نہیں ہوپائی ہے۔

زیکا وائرس کی علامات کیا ہیں؟

زیادہ ترزیکا وائرس سے متاثرہ افراد میں کوئی علامت نظر نہیں آتی یا پھر ہلکی سی علامتیں جیسے بخار، جلد پر ہلکے ہلکے دانے نکلنا، سردرد، جوڑوں میں درد، سرخ آنکھیں اور پٹھوں میں درد پائی جاتی ہیں۔ متاثرین کو عموما اسپتال جانے کی ضرورت نہیں پڑتی اور بہت ہی کم لوگوں کی زیکا سے موت ہوتی ہے۔ اگر کوئی شخص زیکا وائرس سے متاثر ہوتا ہے تو توقع ہیکہ وہ مستقبل کے انفیکشن سے محفوظ ہوجائیگا۔

زیکا وائرس سے کیسے بچیں؟

  • زیکا وائرس چونکہ مچھروں سے پھیلتا ہے اسلئے آپ خود کواورگھروالوں کوان مچھروں سے محفوظ رکھیں۔
  • Aedes مچھروں گھروں اور دفتروں میں اس جگہ پنپتے ہیں جہاں پانی جمع ہو، اسلئے کم از کم ہفتے میں ایک بار اپنے گھروں اور دفتروں میں
    زیادہ ترزیکا وائرس سے متاثرہ افراد میں کوئی علامت نظر نہیں آتی۔(علامتی تصویرWHO)۔
    ۔(علامتی تصویرWHO)۔

    پانی جمع ہونے نہ دیں، ایسا کرنے سے مچھروں کو بڑھنے سے روکا جاسکتا ہے۔

  •  رات میں سوتے وقت لمبی آستین والے نائیٹ ڈریس پہنا کریں اور ہاتھوں اور پاوں پر مچھروں کو بھگانے والی کریم استعمال کریں۔
  • حاملہ اور دودھ پلانے والی خواتین سمیت ہرایک کو مچھروں کے کاٹنے سے بچنے کی کوشش کرنی چاہئے۔
  • ہوسکے تو ائیر کنڈنشڈ کمرے میں رہیں کیوں کہ زیکا وائرس سردی میں نہیں پنپ سکتا ہے۔