چھوٹے بچے کیوں روتے ہیں؟ کیا ہیں اس کی وجوہات، جانیے مکمل معلومات

Reading Time: 3 minutes

بچوں کی پیدائش کے بعد اکثر و بیشتر وہ روتے رہتے ہیں اور وہ اسی دوران خاموش بھی ہوجاتے ہیں۔ انھیں اس دوران بھوک یا پیاس کا احساس ہوتا ہے۔ اسی لیے اپنے بچے کی بھوک کی علامات کو سمجھنا ضروری ہے تاکہ اسے کسی طرح کی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑا۔ بچوں میں اس طرح کی کیفیات کو سائنسی اصطلاح میں تکنیک کو ریسپانسیو فیڈنگ (responsive feeding) کہا جاتا ہے۔ اس دوران بچے کو گود لینا، کھولونے دینا، خوشی فراہم کرنا اور ان کی صحت پر توجہ دینا ضروری ہے۔ تاکہ وہ اپنے آپ کو خوش و خرم محسوس کرے اور انھیں سکون میسر ہو۔

بچے کی مجموعی نشوونما اور پرورش کے لیے بہترین غذا اور وقت پر اس کی فراہمی بھی ضروری ہے۔ تاکہ اسے بار بار بھوک و پیاس کا احساس نہ ہو۔ اپنے بچے میں بھوک کی کسی بھی علامات کو نظر انداز نہ کریں۔ اگر بچوں کو بھوک کا احساس ہوتو وہ اپنے انداز میں اس کا اظہار کرتا ہے۔ جس کو نظر انداز نہیں کیا جانا چاہیے۔ جس میں بار بار رونا، ہاتھوں کو بار بار حرکت دینا، اپنے ہاتھ منہ پر رکھنا اور دیگر حرکات شامل ہیں۔

بچوں کی خوشی کو بڑھانے کے لیے ان سے بہتر انداز میں بات چیت ضروری ہے۔ (تصویر: pixabay)
بچوں کی خوشی کو بڑھانے کے لیے ان سے بہتر انداز میں بات چیت ضروری ہے۔ (تصویر: pixabay)

ہر رونے والا بچہ بھوکا نہیں ہوتا اور ہر بھوکا بچہ روتا رہے، یہ ضروری نہیں ہے۔ اس لیے بچوں کو کھانے اور پرورش کے سلسلے میں نظام الاوقات کو پورا کرنا ضروری ہے۔

بچہ کیوں روتا ہے؟

یہ ایک افسانہ ہے کہ اگر بچہ رو رہا ہے تو وہ بھوکا ہے اور کھانا ناکافی ہے۔ سچ تو یہ ہے کہ بھوک بچے کے رونے کی آخری وجہ نہیں ہے۔ آپ کے چھوٹے بچہ کی رونا شروع کرنے کی کئی دوسری وجوہات ہیں۔ کچھ بچے جسم کا لمس چاہتے ہیں اور وہ چاہتے ہیں کہ ان کی ماں اور والد ان کو چھوئیں۔ بعض اوقات غیر آرام دہ کپڑے، زیادہ لپیٹنا اور گیلے یا گندے لنگوٹ رونے کا باعث بن سکتے ہیں۔ موسم سرما کے دوران سردی سب سے عام وجہ ہے۔ یہ نوزائیدہ کو محسوس کرتا ہے۔

جب بچہ روتا ہے تو کیا کرنا چاہیے؟

سب سے عام سوال یہ ہے کہ جب بچہ روتا ہے تو کیا کرنا چاہیے؟ یاد رکھیں کہ سب کچھ ٹھیک ہو سکتا ہے۔ اس لیے جب آپ کا چھوٹا بچہ روتا ہے تو گھبرائیں نہیں اور گہری سانسیں لیں۔ کبھی کبھی انہیں توجہ اور محبت کی ضرورت ہوتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ انھیں تعلق خاطر کی بھی ضرورت ہوتی ہے۔

بچے آپس میں بہترین دوست ہوتے ہیں (تصویر: pixabay)
بچے آپس میں بہترین دوست ہوتے ہیں (تصویر: pixabay)

بعض بچے گھر میں اکیلے ہونے کی وجہ سے خوف محسوس کرتے ہیں۔ اس لیے ان کے ساتھ وقت بتائیں اور انھیں کبھی بھی اکیلے پن کا احساس نہ ہونے دیں۔

بعض اوقات بچے کرخت آوازوں سے خوف محسوس کرکے رونا شروع کرتے ہیں۔ اس لیے گھر کے ماحول کو پرسکون بنائیں اور بنا وجہ کی آواز نہ کریں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں