’’چھوری‘‘ فلم کا ریویو : ہارر فلم کے ذریعے بچہ کشی کے خلاف سماجی پیغام

Reading Time: 2 minutes

چھوری فلم کی کہانی حاملہ ساکشی (نشرت بھروچہ) کے بارے میں ہے، جو ایک این جی او چلاتی ہے۔ ہیمنت (سوربھ گوئل) اور ساکشی اپنی زندگی میں خوش ہیں اور اپنے پہلے بچے کو دنیا میں لانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ فلم کی کہانی میں اس وقت ایک اہم موڑ آتا ہے جب یہ معلوم ہوتا ہے کہ ہیمنت کو اپنے کاروبار میں نقصان اٹھانا پڑا۔ حالات سے مجبور ساکشی اور ہیمنت ایک چھوٹے سے گاؤں میں منتقل ہو جاتے ہیں اور انہیں گنّے کے ایک بڑے کھیت کے بیچوں بیچ بنے کاٹیج میں چند دنوں کے لیے رہنا پڑتا ہے۔ یہ کاٹیج ان کے ڈرائیور کاجلا (راجیش جیس) کا ہے۔ کاجلا کی بیوی بھنو دیوی (میتا وشیشت) حاملہ ساکشی کی دیکھ بھال کی ذمہ داری لیتی ہے۔ اور ہیمنت اپنے کاروباری مسائل کو حل کرنے میں مصروف ہوجاتا ہے۔

بھنو کی مادری شفقت اور دیکھ بھال سے ساکشی متاثر ہوجاتی ہے۔ شروع میں کاٹیج کے ارد گرد کی چیزیں معمول کی طرح نظر آتی ہیں، لیکن اس گنّے کے کھیت میں ماضی کے بہت سے خوفناک راز چھپے ہوئے ہوتے ہیں۔ کچھ دن بعد ساکشی کو احساس ہوجاتا ہے کہ یہ گاؤں اور گھر عام جگہ نہیں ہے۔ جیسے ہی وہ اس مسئلے کی گہرائی تک پہنچتی ہے، اسے احساس ہوجاتا ہیکہ اس کا پیدا ہونے والا بچے خطرے میں ہے۔ ساکشی کی نظروں کے سامنے تین چھوٹے بچوں کا کھلکھلانا، ریڈیو سے لوری کی آواز آنا وغیرہ جیسے مناظر گھومتے رہتے ہیں لیکن وہ یہ سمجھنے سے قاصر ہیکہ کیا یہ ایک وہم ہے یا حقیقت۔

چھوری فلم کا ٹریئلر یہاں دیکھیں :

وشال فوریہ نے نہ صرف اس فلم کی کہانی لکھی ہے بلکہ اسے ڈائریکٹ بھی کیا ہے۔ وشال نے بتایا کہ جب انہوں نے سب سے پہلے مراٹھی فلم ” لاپاچھپی ” (2017) کی کہانی لکھی تھی تو ان کا مقصد کسی عورت پر مبنی کہانی نہیں بنانا تھا بلکہ ایک کلاسیک ہارر فلم کی کہانی لکھنا چاہتے تھے۔ یاد رہے کہ ہندی فلم “چھوری” اس مراٹھی فلم کی (remake) ہے۔ مراٹھی فلم ” لاپاچھپی ” اس لیے چلی کیوں کہ اداکارہ اوشا نائیک نے ایک بوڑھی خاتون کا بہترین کردار ادا کیا تھا جو ہیروئین کے غیر مولود بچہ (foetus) میں دلچسپی رکھتی ہے۔

ڈائریکٹر وشال نے جہاں تک اپنی اوریجنل مراٹھی فلم کے خطوط پر ہندی فلم “چھوری” پر کام کیا ہے ٹھیک ہے اور جہاں انہوں نے اوریجنل اسٹوری سے انحراف کیا ہے وہاں ہندی فلم ڈگمگانے لگتی ہے۔ ہندی فلم کی ہیروئین نشرت بھروچہ نے سہمی ہوئی حاملہ خاتون کے کردار سے انصاف کیا ہے، لیکن خوفناک بھنو دیوی کا کردار ادا کرنے والی میتا وشیشت ہریانوی زبان میں ڈائیلاگ کی ادائیگی میں کمزور نظر آتی ہیں۔ امیزان پرائم کے حریف OTT نیٹ فلکس کی ” کالی کھوہی ” ( یعنی کالا کنواں ) کی طرح امیزان پرائم ویڈیو کی “چھوری” فلم بھی patriarchal ہولناکیوں کی عکاسی کی کوشش کرتی ہے۔

فلم : چھوری

ڈائریکٹر : وشال فوریہ

کاسٹ : نشرت بھروچہ، میتا وشیشت