سڈنی ڈائیلاگ : کریپٹو کرینسی کے استعمال کو منظم کرنے پر وزیر اعظم مودی نے دیا زور

Reading Time: 2 minutes

وزیراعظم نریندرمودی نے کہا کہ تمام ممالک کومل جل کراس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ کریپٹو کرنسی ‘ غلط ہاتھوں میں نہ چلی جائے جو ہمارے نوجوانوں کو خراب کرسکتا ہے۔ ‘ وزیر اعظم مودی نے سڈی ڈائیلاگ کی تقریر میں کریپٹو کرنسی مضمون پر پہلی بار یہ تبصرہ کیا ہے۔ مودی حکومت کریپٹو کرنسی کو چلانے کیلئے درکار ریگولیٹری فریم ورک پر غور کررہی ہے کیوں کہ لاکھوں بھارتی شہریوں نے اس ڈجیٹل کرنسی میں سرمایہ کاری کی ہے۔

گذشتہ ہفتے ہی مودی نے کریپٹو کرنسی کے مستقبل پرایک اجلاس کیا تھا کیونکہ ایسے خدشات ظاہر کئے جارہے ہیکہ غیرمنظم کریپٹو مارکیٹ منی لانڈرینگ، ٹیرر فینانسنگ کے اڈّے بن سکتے ہیں۔

سڈنی ڈائیلاگ میں وزیر اعظم نے کلیدی خطاب کرتے ہوئے ڈجیٹل دور کے اثرات پر زور دیا۔ مودی نے کہا کہ ہم تبدیلی کے ایسے دور میں ہیں جہاں ٹکنالوجی اور ڈاٹا نئے ہتھیار بن رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ڈیجیٹل دور میں ہمارے اطراف کی ہر چیز بدل رہی ہے۔ اس ٹکنالوجی نے ہماری سیاست، معیشت اور سوسائٹی کو بدل کر رکھ دیا ہے۔

وزیراعظم نریندر مودی نے ‘ بھارت کی ٹکنالوجی : ارتقا و انقلاب ‘ کے موضوع پر بات کرتے ہوئے یہ بھی کہا کہ دنیا ترقی اور خوشحالی کے مواقعوں کے ایک نئے دور میں داخل ہوگئی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ‘ لیکن ہمیں نئے خطرات اور سمندر سے لیکر سائبر اور سائبر سے لیکر خلا تک نت نئے تنازعات کا بھی سامنا ہے۔ ٹکنالوجی، عالمی مسابقت اورمستقبل کے عالمی نظام کو تشکیل دینے میں بڑی آلہ کار بن گئی ہے۔ وزیر اعظم مودی نے مزید کہا کہ ‘ جمہوریت کی بڑی طاقت شفافیت ہے۔ اسکے ساتھ ساتھ ہمیں چند مفاد پرست لوگوں کو اس شفافیت کے غلط استعمال سے بھی روکنا ہوگا۔ وزیر اعظم مودی کے خطاب سے پہلے آسٹریلیا کے وزیر اعظم اسکاٹ موریسن نے اپنی افتتاحی تقریر کی تھی۔ سڈنی ڈائیلاگ آسٹریلین اسٹراٹیجک پالیسی انسٹی ٹیوٹ کا اقدام ہے کو 17 سے19 نومبر کے بیچ منعقد کیا جارہا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں