سلطان کے دورۂ دوحہ کے دوران عمان۔ قطر کا چھ معاہدوں پر دستخط، جانیے تفصیلات

Reading Time: 2 minutes

عمان اور قطر دونوں خلیجی ممالک کی سرکاری خبر رساں ایجنسیوں نے بتایا کہ عمان (Oman) اور قطر (Qatar) نے پیر کو فوجی تعاون، ٹیکس، سیاحت، بندرگاہوں، مزدوری اور سرمایہ کاری سے متعلق چھ معاہدوں پر دستخط کیے ہیں کیونکہ عمان قرضوں کے بوجھ تلے دبی اپنی معیشت کو متحرک کرنا چاہتا ہے۔

عمان خلیجی تیل پیدا کرنے والے ممالک میں مالی لحاظ سے سب سے کمزور ملک ہے۔ نصف صدی تک حکمرانی کرنے والے اپنے پیشرو کی موت کے بعد تقریباً دو سال قبل سلطان ہیثم بن طارق السعید (Sultan Haitham bin Tariq al-Said) نے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے یہ وسیع شروع کی ہے۔ تاکہ عمان کی زوال پذیر معیشت کو سہارا دیا جاسکے اور ملک میں اصلاحات نافذ کی جائیں۔

ان معاہدوں پر عمان کے سلطان ہیثم (Oman’s Sultan Haitham) کے دو روزہ سرکاری دورے کے دوران دستخط کیے گئے۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ قطر مشرق وسطی کا چھوٹا لیکن دولت مند ملک ہے۔ جو دنیا میں مائع قدرتی گیس (LNG) کے سب سے بڑے پروڈیوسر میں سے ایک ہے۔

قطر کے امیر کے انتظامی دفتر کے ذمہ دار امیری دیوان (Amiri Diwan) نے کہا کہ ان معاہدوں میں آمدنی اور کیپٹل ٹیکس، خودمختار دولت کے فنڈز قطر انویسٹمنٹ اتھارٹی اور عمان انویسٹمنٹ اتھارٹی کے درمیان سرمایہ کاری کے تعاون کا معاہدہ بھی شامل ہے۔ مذکورہ معاہدووں پر مزید تفصیلات فوری طور پر دستیاب نہیں ہیں۔

سنہ 2014 میں تیل کی قیمتوں میں کمی کے بعد سے عمان نے بڑی مقدار میں قرض حاصل کیا، جس کی کل آبادی 50 لاکھ کے قریب ہے۔ اس نے حال ہی میں اپنے مالی معاملات کو ٹھیک کرنے کے لیے ایک درمیانی مدتی منصوبہ شروع کیا جو عالمی وبا کورونا وائرس (کووڈ۔19) سے شدید متاثر ہوا ہے۔ اکتوبر 2020 کے بانڈ پراسپیکٹس کے مطابق عمان گزشتہ سال سے ہی مالی مدد کے لیے کچھ خلیجی ممالک کے ساتھ مسلسل بات چیت میں مصروف ہے تاکہ اس کی مالی مدد کی جاسکے۔