Saudi Arabia: سعودی عرب میں انڈیا، پاکستان سمیت چھ ممالک کے شہریوں کو براہ راست داخلے کی ملی اجازت

Reading Time: 2 minutes

سعودی عرب (Saudi Arabia) نے اعلان کیا ہے کہ وہ انڈونیشیا، پاکستان، انڈیا، مصر، برازیل اور ویتنام سمیت چھ ممالک سے کسی تیسرے ملک میں 14 دن کے قرنطینہ میں گزارے بغیر براہ راست داخلے کی اجازت دے گا۔ سعودی وزارت داخلہ کے ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ مذکورہ چھ ممالک کے عوام کو بغیر قرنطینہ کے سعودی عرب میں آمد کا نیا آرڈر یکم دسمبر 2021 سے نافذ العمل ہو گا۔ وزارت نے ایک بیان میں کہا کہ ان ممالک سے آنے والے مسافروں کو پانچ دن ادارہ جاتی قرنطینہ میں گزارنے کی ضرورت ہوگی۔

ذرائع نے کہا ہے کہ مملکت سعودی عرب میں آمد کے بعد عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) سے متعلق احتیاط اور حفاظتی اقدامات پر عمل ضروری ہے اور ان کو نظر انداز نہ کیا جائے۔ وزارت نے کہا کہ یہ فیصلہ کووڈ۔19 پھیلنے سے نمٹنے کی کوشش کا حصہ ہے۔ سابق میں کچھ ممالک کے عازمین کو مملکت میں براہ راست داخلے کی عارضی معطلی کا اعلان کیا گیا تھا۔ وزارت کے بیان کے مطابق تازہ فیصلہ بھی عالمی سطح پر کورونا وائرس کی صورتحال میں پیشرفت کے مطابق مملکت کے صحت حکام کی طرف سے مسلسل جانچ کے بعد کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کے محکمہ خارجہ کے مطابق زائرین کو سختی سے مشورہ دیا جاتا ہے کہ سعودی عرب میں داخلے کی ضروریات کے رہنما خطوط اور سفر سے پہلے کے طریقہ کار کے ساتھ اپ ٹو ڈیٹ رہیں۔

رہائشی (اقامے کے ساتھ غیر سعودی شہری) جنہوں نے اپنے سفر سے قبل سعودی عرب کے اندر مقامی طور پر منظور شدہ کووڈ۔19 ویکسین کی دو خوراکیں حاصل کی ہیں انہیں مذکورہ بالا ممالک میں سے کسی سے بھی بغیر کسی پابندی کے براہ راست سعودی عرب میں داخل ہونے کی اجازت ہے۔ ہیلتھ ورکرز اور ان کے اہل خانہ اس پابندی سے مستثنیٰ ہیں لیکن پھر بھی انہیں گھر پہنچنے پر قرنطینہ اور پی سی آر ٹیسٹ کی مدت مکمل کرنے کی ضرورت پڑ سکتی ہے۔